راجہ قمر اسلام اور وسیم اجمل کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع ، گیارہ ستمبر کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم

لاہور (اے ٹی ایم آن لائن) لاہور کی احتساب عدالت نے صاف پانی کمپنی اسکینڈل کے دو مرکزی ملزمان راجہ قمر اسلام اور وسیم اجمل کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کردی. عدالت نے نیب کو ملزمان کو گیارہ ستمبر دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا ہے

صاف پانی کمپنی اسکینڈل میں ملوث انجینئر راجہ قمرالسلام اور سابق سی ای او صاف پانی وسیم اجمل کوجوڈیشل ریمانڈ ختم ہونے پر احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔۔۔۔نیب نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ملزم انجینئر قمر اسلام راجہ پر چوراسی  واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹس کا ٹھیکہ غیر قانونی طورپر مہنگے داموں دینے کا الزام ہے۔

واٹر پلانٹس میں چھپن ریورس آسموسز پلانٹس تھے جبکہ اٹھائیس الٹرا فلٹریشن پلانٹس شامل ہیں۔۔۔ ملزم  قمرالسلام راجہ نے بدنیتی کے ذریعے بڈنگ کے کاغذات میں مالی تخمینہ بڑھا کر ظاہر کیا۔۔۔۔جبکہ ایک سو دو واٹر فلٹریشن پلانٹس کا ٹھیکہ کے ایس بی پمپس کو مہنگے داموں دیا گیا

عدالت کو بتایا گیا کہ سابق سی ای او ملزم وسیم اجمل پر پراجیکٹ بڈنگ کے بعدغیر قانونی طورپر صاف پانی کمپنی کے کاغذات میں تبدیلیاں کرنے کا الزام ہے. ملزم نے آٹھ  فلٹریشن پلانٹس غیر قانونی طورپر تحصیل دنیا پور میں لگائے جبکہ متعلقہ علاقہ کنٹریکٹ میں شامل نہ تھا. عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد ملزمان کے جوڈیشل ریمانڈ میں گیارہ ستمبر تک توسیع کرتے ہوئے کیس کی سماعت ملتوی کردی.