مستقبل میں پاکستان قرضے لینے والا نہیں دینے والا ملک بنے گا ، فواد چوہدری

اسلام آباد(اے ٹی ایم نیوز آن لائن) وزیراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ عمران خان پاکستان کےمفادکاسودا کبھی نہیں کریں گے، پی ٹی آئی کا ہر شخص عمران خان کے دیانتدار ہونے کی قسم کھا سکتا ہے، نواز شریف کا سیاسی مستقبل کوتباہ ہوچکا ہے، ، ایوان میں نہیں آسکتے۔ وزیراطلاعات فواد چوہدری نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا جب اپوزیشن کو جواب نہ ملے تو احتجاج ان کا حق ہے ، وزرا کو اپنی وزارتیں بھی چلانی ہیں اس لیے چلے گئے ہیں، اپوزیشن کو دن میں تارےاور رات میں اسرائیلی طیارے نظرآرہے ہیں۔
وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ ہم کہتے ہیں نا رو اور یہ لوگ کہتے ہیں این آراو، ہماری طرف سے مکمل اور بھرپور جواب آئے گا، اپوزیشن پریشان نہ ہو، اپوزیشن اطمینان رکھے ہم جواب ضرور دیتے ہیں، خورشیدشاہ کی ہمیشہ کوشش ہوتی ہےمعیشت پربات نہ کی جائے، 10 سال میں معیشت کیساتھ جو کھلواڑ ہوا، خورشید شاہ اس کا حصہ رہے۔ اپوزیشن کو دن میں تارے اور رات میں اسرائیلی طیارے نظر آرہے ہیں۔
فواد چوہدری نے کہا ایک لاکھ 63 ہزارلوگوں کو سرکاری اداروں میں میرٹ کے بغیر بھرتی کیا گیا، معیشت پر بات ہوتی ہے تو یہ لوگ کوئی بہانہ بنا کر واک آؤٹ کرتے ہیں، اپوزیشن والے سچ برداشت نہیں کرسکتے کیونکہ سچ کڑوا ہوتا ہے، فالودے والے کے اکاؤنٹ سے اربوں نکل رہے ہیں، یہ فالودہ کس نے بنایا.
ان کا کہنا تھا کہ جو آج ملکی معاشی تباہی ہے، اس کے ملزم اسمبلی کی پہلی صف میں نظر آئیں گے، پاکستان ٹیلی ویژن میں 10 ہزاروں کو بھر دیا گیا، پاکستان اسٹیل مل 2007 سے بند ہے، لوگوں کو تنخواہیں نہیں مل رہیں، پی آئی اے کی صورتحال عوام کے سامنے ہے، ایسے لوگوں کو بھرتی کیا گیا، جو ایک روز بھی دفتر نہیں گئے اور مراعات لیتے رہے۔
وزیراطلاعات نے کہا یہ لاڈلے آج ہمیں بتارہے ہیں ہم نے کیا کرنا ہے، گزشتہ ادوار میں سیاسی بھرتیوں سے اداروں کو تباہ کیا گیا، اپوزیشن نے اپنی میٹنگ کرنی ہے، اس لیے واک آؤٹ کا بہانہ بنایا گیا۔ ہم نے سعودی عرب سے پاکستان کے بچوں کیلئے بھیک مانگی.
نواز شریف کے حوالے سے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ نوازشریف تو ایوان میں آنہیں سکتے باہر بیٹھ کر ہی میٹنگ کریں گے، نواز شریف کا سیاسی مستقبل کوتباہ ہوچکا ہے باہرہی رہیں گے۔
انھوں نے مولانا فضل الرحمان پر تنقید کرتے ہوئے کہا مولانافضل الرحمان کشمیرسےمتعلق ایک بھی پیغام دکھا دیں، مولانافضل الرحمان اورنوازشریف ایک ساتھ بیٹھے تھے، یہ لوگ پاکستان کا نہیں بھارت اور مودی کا ایجنڈا آگے بڑھا رہے تھے، کشمیر سے متعلق یوم سیاہ منایا جارہا تھا اور مولانا فضل الرحمان اے پی سی میں لگے تھے، یوم سیاہ کشمیر پر مولانا فضل الرحمان نے ایک بیان تک نہیں دیا۔
دورہ سعودی عرب سے متعلق وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ ہم نے سعودی عرب سے پاکستان کے بچوں کیلئے بھیک مانگی ہوگی، ہم نے آپ کی طرح اپنے بچوں کےاکاؤنٹ بھرنے کیلئے بھیک نہیں مانگی۔ فواد چوہدری نے مزید کہا گزشتہ 2 حکومتوں نےمشرق وسطیٰ کےمسائل پرتوجہ دی؟ آج پاکستان کودرخواست کی جا رہی ہے مشرق وسطیٰ کےتنازعات حل کریں۔ پی ٹی آئی کاہرشخص عمران خان کے دیانتدار ہونے کی قسم کھا سکتا ہے. ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے وزیراعظم کا سعودی عرب میں کیسا استقبال ہوا اخبارات دیکھیں، آج چین بھی پاکستان کی نئی حکومت کے وژن سے مطمئن نظر آتا ہے، آج چین بھی کہتا ہے پاکستان کے ساتھ نئے تعلقات کا دور شروع ہوگا۔
وزیر اطلاعات نے کہا ہم فرشتے نہیں ہم سے غلطیاں ہوسکتی ہیں، عمران خان پاکستان کے مفاد کا سودا کبھی نہیں کریں گے، پی ٹی آئی کاہرشخص عمران خان کےدیانتدار ہونے کی قسم کھا سکتا ہے، ان کی دیانتداری پر اپنے پارٹی ممبر تو دور اپنے گھر کے لوگ بھی قسم کھانے کو تیار نہیں۔ مستقبل میں پاکستان قرضے لینے والا نہیں دینے والا ملک بنے گا۔
فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ نیپرا ایک اتھارٹی ہے، جس کو ہم نے نہیں بنایا،بجلی کے ریٹ طے کرتی ہے، نیپرا نے کہا بجلی کی قیمت میں 3.85 فی یونٹ کا اضافہ کیا جائے، نیپرا کی تجویز مسترد کر کے ہم نے1.27روپے فی یونٹ اضافہ کیا، جو کہتے تھے بجلی کی لوڈشیڈنگ ختم نہ کی تو میرا نام بدل دینا، عملی طور پر ہمیں تو نام رکھنے کیلئے پول کرانا چاہیے تھا۔انھوں نے کہا کہ ملک میں ایک صبح طلوع ہوچکی ہےجس کامستقبل روشن ہے، مستقبل میں پاکستان قرضے لینے والا نہیں دینے والا ملک بنے گا۔