ایئر فورس کے چائے کے خالی کپ کی قیمت کیا ہے؟ آپ حیران رہ جائیں گے

فائل فوٹو

لاہور (اے ٹی ایم نیوز آن لائن)اگرچہ دنیا میں ایسی کافی بھی موجود ہے جس کا ایک کپ 10 ہزار روپے سے زائد کا ہوتا ہے، تاہم امریکی ایئر فورس کے پاس موجود کافی کا خالی کپ بھی ڈیڑھ لاکھ روپے سے زائد قیمت کا ہے۔

جی ہاں، امریکی ایئر فورس کی جانب سے کافی یا چائے کے لیے اتنے مہنگے کپ استعمال کیے جانے پر امریکی سینیٹر کو تشویش ہے اور انہوں نے فوج سے اس بات کا جواب طلب کرلیا کہ آخر اتنے مہنگے کپس کو استعمال کرنے کی ضرورت کیوں پڑی؟
رواں ماہ 2 اکتوبر کو امریکی سینیٹ کی کمیٹی آف جوڈیشری نے ایئر فورس کے سیکریٹری ہیتھر ولسن کو ایک خط بھیجا، جس میں ان سے اتنے مہنگے کپ استعمال کرنے کی وجہ پوچھی گئی۔

کمیٹی کی جانب سے بھیجے گئے خط میں ایئر فورس سیکریٹری سے پوچھا گیا تھا کہ کمیٹی کو اطلاع ملی ہے کہ ایئر فورس نے 2017 میں کافی اور چائے کے مہنگے کپس کی خریداری پر 56 ہزار امریکی ڈالر یعنی پاکستانی 75 لاکھ روپے کے قریب خرچ کیے۔
خط میں ایئر فورس سیکریٹری سے پوچھا گیا تھا کہ آخر ایئر فورس کو صرف 25 کپس کی خریداری پر اتنی خطیر رقم خرچ کرنے کی ضرورت کیوں پیش آئی اور کیوں صرف ایک کپ کی خریداری پر ڈیڑھ لاکھ روپے سے زائد کی رقم خرچ کی گئی۔

ساتھ ہی کمیٹی کی جانب سے بھیجے گئے خط میں اس بات پر غصے کا اظہار بھی کیا گیا تھا کہ 2016 میں ایک کپ کی رقم تقریبا 693 امریکی ڈالر تھی جو 2018 تک بڑھ کر 1280 ڈالر تک جا پہنچی، یعنی ہر ایک کپ پر ایئر فورس نے اضافی 600 ڈالر سے زائد کی رقم خرچ کی۔

فاکس نیوز نے رواں ماہ 22 اکتوبر کو خبر دی تھی کہ سینیٹ کمیٹی کی جانب سے خط بھیجے جانے کے بعد ایئر فورس کے سیکریٹری نے جوابی خط بھیجا تھا۔
ایئر فورس کی جانب سے بھیجے گئے خط میں سیکریٹری نے بتایا تھا کہ انہوں نے ایسے مہنگے کپس کی خریداری پر اب پابندی عائد کردی ہے، ساتھ ہی ایئرفورس انتطامیہ کو آگاہ کیا گیا ہے کہ مہنگے کپس خریدنے کے بجائے دیگر متبادل ذرائع کو استعمال کیا جائے۔

سیکریٹری نے کمیٹی کو آگاہ کیا کہ انہوں نے ایئر فورس انتظامیہ کو تجویز دی ہے کہ اتنے مہنگے کپس خریدنے کے بجائے تھری ڈی ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جائے، یا پھر ایسے کپ خریدے جائیں جو ٹوٹنے کے بعد ریپیئر ہوسکیں۔

سی این این نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ایئر فورس کے سیکریٹری نے مہنگے کپ خرید جانے پر سینیٹ کی کمیٹی کے خدشات کو درست قرار دیتے ہوئے سینیٹرز کو یقین دہانی کرائی کے اب چائے یا کافی کے کپس پر اتنی خطیر رقم خرچ نہیں کی جائے گی۔

فاکس نیوز کی رپورٹ کے مطابق امریکی ایئر فورس کافی یا چائے کے لیے جو کپ استعمال کرتی ہے وہ جہاں ڈیڑھ لاکھ روپے سے زائد کی قیمت میں ملتے ہیں، وہیں وہ ریپیئر بھی نہیں ہوتے۔

رپورٹ کے مطابق اگر ان کپس کا ہینڈل ٹوٹ جائے تو وہ دوبارہ ریپیئر نہیں ہوتا اور ایئر فورس ایسے کپس کو فالتو سمجھ کر پھینک دیتی ہے۔
رپورٹ کے مطابق ایئر فورس ان کپس کو طویل دورانیے پر مشتمل پروازوں، کارگو کی ترسیل سمیت دیگر اہم کام سر انجام دینے والی پروازوں کے دوران استعمال کرتی ہے۔

ان کپس میں چائے یا کافی زیادہ دیر تک نہ صرف گرم رہتی ہے، بلکہ انہیں چائے کو دوبارہ گرم کرنے کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔