اسمارٹ فون میں فٹ آنے والا ہر چارجر استعمال کرنا ٹھیک نہیں

لاہور (اے ٹی ایم نیوز آن لائن) ہر ڈیوائس یعنی اسمارٹ فون، ٹیبلیٹ یا لیپ ٹاپ کے اپنے چارجر ہوتے ہیں تاہم کئی بار ضرورت پڑنے پر لوگ اپنے دوستوں سے چارجر لے کر استعمال کرتے ہیں۔

مگر کیا ہر وہ چارجر جو آپ کی ڈیوائس میں فٹ آجائے، استعمال کرنا نقصان تو نہیں پہنچاتا؟

مثال کے طور پر مائیکرو یو ایس بی چارجر جو کہ برسوں سے اسمارٹ فونز اور ٹیبلیٹس میں استعمال ہورہے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ لگ بھگ ہر اینڈرائیڈ فون کی کیبل دوسرے میں کام کرنے لگتی ہے۔

تاہم اگر آپ ہر طرح کے چارجر سے اپنے فون کو چارج کرنا عادت بنالیں تو یہ طویل المعیاد بنیادوں پر نقصان دہ اور خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ ہر کمپنی کے فون کے اندر ایک خصوصی چپ ہوتی ہے جو کہ متعدد افعال کے لیے ضروری ہوتی ہے اور اسے کسی غلط کیبل سے نقصان پہنچ سکتا ہے جس کے نتیجے میں فون کے چند فنکشن متاثر ہوسکتے ہیں۔

مثال کے طور پر اگر آپ ایک پرانا 5 واٹ کا چارجر نئے اسمارٹ فون کے لیے استعمال کریں تو نتیجہ کچھ زیادہ متاثرکن نہیں ہوگا کیونکہ ڈیوائس بہت سست روی سے چارج ہوگی جس کی وجہ یہ ہے کہ آج کل کے بیشتر فونز فاسٹ چارجر کو قبول کرنے کے لیے تیار کیے جاتے ہیں۔

اگر آپ کو علم نہ ہو تو جان لیں کہ دیکھنے میں مائیکرو یو ایس بی کا ڈیزائن تو یکساں ہوتا ہے مگر ان کے اندر کا سرکٹ یکساں نہیں ہوتا۔

آسان الفاظ میں چارجر کے کنکٹر ایک سائز کے ہوسکتے ہیں مگر وہ اندر سے ایک جیسے نہیں ہوتے۔

تو اس یو ایس بی کیبل اور چارجر کو ہی استعمال کریں جو فون کے ساتھ ہو اگر خراب ہوجائیں تو اسی کمپنی کے خریدنے کی کوشش کریں۔

اگر آپ کے پاس چارجر نہ ہو تو کسی دوست کا استعمال کرنے سے پہلے اپنے فون کے لیے ضروری بجلی یا پاور میچ کا خیال رکھیں۔

سستے چارجر اور کیبل خریدنا فون کی بیٹری لائف کو متاثر کرسکتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ کمپنی کے اپنے چارجر مہنگے ہوتے ہیں۔